ملتان (صفدربخاری) مرکزی تنظیم تاجران پاکستان کے مرکزی چیئرمین خواجہ سلیمان صدیقی، ملتان ڈویژن کے چیئرمین فہداسحاق سانگی،ملتان کے نائب صدرو پرانی سبزی منڈی کے صدر رانا محمد اویس علی،پنجاب کے نائب صدر ملک عمران قیوم بھٹہ، پیپر مارکیٹ کے صدرچوہدری عبدالحمید جٹ، ضلع ملتان کے جنرل سیکرٹری رانا محمد ہاشم، سورج میانی کے صدرکفایت حسین صدیقی نے کہا ہے کہ نا اہل حکمراں ٹولے نے عوام سے دو وقت کی روٹی کا نوالہ تک چھین لیا ہے، آٹے کی قمیت میں اضافے سے غریب اور متوسط طبقہ بھوک و افلاس برداشت کرنے پر مجبور ہو جائیگا،ملک میں گندم کی بہترین پیدوار اور ذخائر کے باوجود آٹے،چینی اورگھی کی قیمتیں آسمان کو چھو رہی ہیں،کرپٹ اور نا اہل ٹولے نے عوام کا جینا دو بھر کر رکھا ہے،حکومت فی الفور آٹے،چینی اورگھی سمیت اشیائے خوردونوش کی قیمتوں کو کم کرنے کے اقدامات کرے اگر ایسا نہ کیا گیا تو عوام سڑکوں پر نکلنے کے لئے مجبور ہو جائیں گے غریب عوام پہلے ہی بجلی اور پٹرول کی وجہ سے پریشان ہے خواجہ سلیمان صدیقی مزید کہا کہ اشیائے خوردونوش کی قیمتوں میں ہوش با اضافہ ناقابل برداشت ہے،حکومت ہوش کے ناخن لے حکمرانوں کی نا اہلی اور ناقص حکمت عملی کی وجہ سے آج ملک میں آٹے کی کم از کم قیمت پھر 130 روپے فی کلو تک پہنچ چکی ہے جبکہ چینی کی فی کلو قیمت 150 روپے ہو گئی ہے ان کا کہنا تھا کہ آٹے کی قیمتوں میں اضافے سے عام آدمی کیلئے سستی روٹی کا حصول ناممکن ہو گیا ہے۔آٹے،چینی گھی کی قیمتوں میں ایک بار پھر اضافہ حکومتی نااہلی و بدانتظامی کا نتیجہ ہے اور ان کی نا اہلی نے عوام سے دو وقت کی روٹی کا نوالہ تک چھین لیا ہے انہوں نے کہا کہ حکومتی سرپرستی میں آٹے و چینی کی اسمگلنگ مسلسل جاری ہے اور سمگلر کو کھلی چھوٹ دی گئی ہے اور ان کے خلاف کوئی ایکشن لینے کی جراٗ ت تک نہیں کر سکتا دوسری جانب اشیائے خوردونوش کا کاروبار کرنے والے تاجر بھی مہنگائی سے متاثر ہورہے ہیں اور اشیائے خوردونوش کی مہنگی قیمتوں سے خریداری سمیت چھوٹے تاجر کا شرح منافع کم ہوا ہے لہذاحکومت فی الفور آٹے،چینی،گھی سمیت اشیائے خوردونوش کی قیمتوں کو کم کرنے کے اقدامات کرے تاکہ عوام کو ریلیف مل سکے۔