کراچی: ملک بھر کی طرح سندھ میں بھی بہت تیزی سے ظاہر ہوتے ہوئے موسمی تغیرات نے صوبے کے تعلیمی کلینڈر کو out dated اور موسمی حالات کے برعکس کر دیا ہے۔متعلقہ حکام کی عدم توجہی کے سبب اب سندھ کے تعلیمی کلینڈر کو دقیانوسی قرار دیا جا رہا ہے کیونکہ تعلیمی کلینڈر میں سیشن اور امتحانات کے انعقاد کے اوقات موسم سے عدم مطابقت کے باعث سندھ کے لاکھوں طلبہ کے لیے وبال جان بن چکے ہیں۔موسم سرما میں اس سے سب سے زیادہ چھوٹی یا جونیئر کلاسز کے لاکھوں بچے جبکہ موسم گرما میں اس سے میٹرک اور انٹر کی سطح پر ہر سال تقریباً 20لاکھ طلبہ براہ راست متاثر ہو رہے ہیں تاہم سندھ حکومت کا محکمہ اسکول و کالج ایجوکیشن اور محکمہ یونیورسٹیز اینڈ بورڈز کسی صورت بھی اس جانب توجہ دینے یا تعلیمی کلینڈر کو موسمی حالات سے مطابقت دینے کو تیار نہیں ہے اور نتیجے کے طور پر کسی سال تعطیلات کو طول دیا جاتا ہے جبکہ رواں سال کی طرح اکثر میٹرک اور انٹر میڈیٹ کے امتحانات شدید گرمی کی لہر ’’ہیٹ ویو‘‘ کے سبب ملتوی کر دیے جاتے ہیں۔