ملتان :  آل پاکستان پبلک ٹرانسپورٹ اونر فیڈریشن کا ہنگامی اجلاس آل پاکستان ٹرانسپورٹرز اونر فیڈریشن کے صدر رانا اصغر, جنرل سیکرٹری میاں ولی، ملک ناصر ڈوگر، ملک عباس ڈوگر،ملک ارشد ڈوگر، رانا منور، رانا وکیل,رانا وقار، رانا جہانزیب،رانا عرفان سمیت دیگر نے شرکت کی آل پاکستان ٹرانسپورٹرز اونر فیڈریشن کے صدر رانا اصغر نے کہا کہ ٹرانسپورٹرز ملک میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتا ہے اور سب سے زیادہ ٹیکس بھی ہم دیتے ہیں لیکن مذید ظالمانہ ٹیکس ہم برداشت نہیں کرینگے لگائے گئے ٹیکس جلد واپس نہ لیے گئے تو ملک بھر میں ہڑتال کرنے پرمجبور ہونگے صدر رانا اصغر نے کہا کہ نیشنل ہائی وے پر پبلک ٹرانسپورٹ پر ٹیکس بڑھانے کوئی جواز نہیں،ہرضلع میں پبلک ٹرانسپورٹ پر ٹیکس کی بھرمار ہے نیشنل ہائی وے اور موٹروے پر ٹول ٹیکس کی مد میں 35 سے 40 فیصد تک اضافہ کردیا گیا ہے، آل پاکستان ٹرانسپورٹرز نے اسے ناقابل قبول قرار دیتے ہیں بھاری گاڑیوں کیلئے نیشنل ہائی ویز پر ٹول ٹیکس 40 فیصد اضافے کے بعد 250 سے بڑھا کر 350 روپیکردیا گیا ہے، موٹر وے ایم 5 پر ٹول ٹیکس 37 فیصد اضافے کے بعد 3280 سے بڑھا کر 4500 کردیا گیا۔ڈبل، ٹرپل ایکسل ٹرک کا ایم 3 پر ٹول ٹیکس 35 فیصد اضافے کے بعد 1550 سے بڑھ کر 2100 روپے ہوگیا ہے۔بسوں کیلئے موٹر ویز پر ٹول ٹیکس 33 فیصد اضافے کے بعد 1200 سے بڑھا کر 1600 کردیا گیا ہے جبکہ نیشنل ہائی ویز پر ٹول ٹیکس 33 فیصد اضافے کے بعد 120 سے بڑھا کر 160 روپے کردیا گیا ہے۔رانا اصغر کا مذید کہنا تھا کہ ٹول ٹیکس میں ہوشربا اضافہ ناقابلِ قبول اور سراسرظلم ہے۔ٹرانسپورٹرز پہلے ہی مہنگے داموں ڈیزل، اسپیئر پارٹس اور ٹائرز خریدنے پر مجبور ہیں، اضافے سے گڈز ٹرانسپورٹرز، آئل ٹینکرز، پبلک ٹرانسپورٹ، انٹرسٹی، لوکل بس اور ویگن مالکان بھی پریشان ہیں۔آل پاکستان ٹرانسپورٹرز ایسوسی ایشن نے وزیرِاعظم اور نیشنل ہائی ویز اتھارٹیز سے درخواست کی ہے کہ ٹیکسز میں اضافہ واپس لیا جائے۔