ملتان : عہد آرگنائزیشن کے زیر اہتمام انسانی سمگلنگ کے روک تھام کے حوالے سے آگاہی واک نکالی گئی واک شرکا نے بڑھتی ہوتی انسانی سمگکنگ کے پر تشویش کا اظہار کیا اور حکومت سے مطالبہ کیا کہ بڑھتے ہوئے واقعات پر کنٹرول کیا جائے اور ذمہ داروں کو قرار واقعی سزا دی جائے واک میں لیبر ڈیپارٹمنٹ. سوشل ویلفیئر ٹریڈ یونین. بھٹہ مزدور یونین اور ٹرانس جینڈر نے بڑھی تعداد میں شرکت کی واک شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے عہد آرگنائزیشن کی ایگزیکٹو ڈائریکٹر اقصی ہاشمی نے کہا انسانی سمگلنگ کے بڑھتے ہوئے واقعات لحمہ فکریہ ہیں قانون سازیوں میں انہیں با الکل نظر انداز کیا گیا، آگر قوانین موجود ہیں لیکن اس پرحکومت عمل در آمد کرانے میں ناکام ہو چکی ہے حکومت کو چاہیے کہ حقوق ،احترام اور تحفظ کے لئے مشاورت سے ہر سطح پرٹھوس قانون سازی کی جائے، ٹرانسجینڈر افراد،سول سوسائٹی تنظیموں ،انسانی حقوق کے کارکنوں کے ساتھ شفاف ،با معنی اور وسیع مشاورت کے بعد اس قانون کے ضوابط کی فی الفور تشکیل کو یقینی بنایا جائے۔ انسانی سمگلنگ میں سنگین نوعیت کے جرائم کی وارداتوں میں اضافہ دیکھنے میں آیا ہے، جنسی استحصال تو عام سی بات ہے مگر اب جسمانی تشدد اور قتل کے واقعات تسلسل کے ساتھ ہو رہے ہیں ،گھر سے لیکر سماج اور ریاست کی سطح تک طبقہ شدید عدم تحفظ اور خوف کا شکار ہے ۔ تاہم، ان تمام وعدوں کے باوجود وہ پاکستان میں یہ طبقہ محرومی اور کسمپرسی کی زندگی بسر کر رہا ہے حکومت کو ترجیحی بنیادوں پر ان پر غور کرنے کی ضرورت ہے اس موقع پر ٹریڈ یونین کے رہنما دلاور عباس صدیقی . لیبر یونین کے رہنما ملک محسن بھٹہ نے بھی میڈم نوشین نے خطاب کیا واک میں سوشل ویلفیئر ڈیپارٹمنٹ سے نوید بیگ. ٹرانس جینڈر ہانیہ. منیتا. ریشمہ. اینہ. مسرت. ببلی. کشش. رانی شاہ. نمو آپی. اینڈی. شیلہ. سجو. کرن. آشی ودیگر نے شرکت کی