اسلام آباد: ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن کورٹ اسلام آبادنے عدت میں نکاح کیس فیصلے کیخلاف عمران خان اور بشریٰ بی بی کی اپیل قابل سماعت قرار دیدی،سیشن عدالت نے فریقین کو 11مارچ کیلئے نوٹس جاری کردیئے۔  ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن کورٹ اسلام آباد میں بانی پی ٹی آئی عمران خان  اور  بشریٰ بی بی کی عدت میں نکاح کیس کے فیصلے کیخلاف اپیلوں پر سماعت ہوئی،وکیل صفائی سلمان اکرم راجہ نے کہاکہ سپریم کورٹ کے فیصلے کے مطابق 39روز کے بعد نکاح قابل قبول ہو سکتا ہے،بشریٰ بی بی اور بانی پی ٹی آئی کا نکاح تقریباً70روز کے بعد ہوا،سپریم کورٹ کے فیصلے کے مطابق اگر خاتون نے عدت مکمل ہونے کا بیان دے دیا تو مانا جائے گا۔ سلمان اکرم راجہ نے کہاکہ شریعت کے قوانین کے مطابق ایسے ذاتی معاملات کو ہمیشہ ذاتی رکھنا چاہئے،دوران عدت نکاح جیسے کیسز کو سیاسی انتقام لینے کیلئے عدالت کا کندھا استعمال کیاگیا،ہم بہت گر گئے ہیں ، ہم لوگ کسی شخص کے بیڈ روم تک پہنچ گئے ہیں،معاشرے میں شائستگی قائم رہنی چاہئے،ایسے کیسز نہیں دائر ہونے چاہئیں،عدت میں نکاح کیس کے اثرات بیرون ملک تک گئے ہیں،اس سے قبل محمد حنیف نامی شخص نے اسی طرح کی شکایت دائر کی تھی، عون چودھری جیسے افراد شکایت میں ملوث تھے،میں نے اپیل قابل سماعت ہونے پر کافی دلائل دے دیئے۔ سیشن جج نے عدت میں نکاح کیس کے فیصلے کیخلاف اپیل قابل سماعت قرار دیدی،سیشن عدالت نے فریقین کو 11مارچ کیلئے نوٹس جاری کردیئے۔